Get Even More Visitors To Your Blog, Upgrade To A Business Listing >>

چاند کی جگہ پر مشتری

اگر چاند کی جگہ پر مشتری کو رکھ دیا جائے تو کیا ہو گا؟

تخیل کے گھوڑے ڈوراتے ہیں اور چاند کو ہٹا کر وہاں مشتری رکھ دیتے ہیں۔

سب سے پہلی چیز جو ہم دیکھیں گے وہ آسمان کے ایک بڑے حصے پر مشتری کا قبضہ ہو گا مگر پورے آسمان کو مشتری پھر بھی نہیں ڈھانپ پائے گا۔مشتری کا ریڈیس چاند سے چالیس گنا بڑا ہے، آپ یوں اندازہ لگا لیں کہ اگر چالیس چاند آسمان پر ایک ساتھ رکھ دئیے جائیں تو آسمان کا کتنا حصہ چھپ سکے گا۔ مشرق سے مغرب تک( یا شمال سے جنوب تک)  آسمان کے 180  ڈگری  میں سے مشتری صرف 20  ڈگری  پر  قابض ہو گا  اور  باقی  آسمان  خالی  ہو  گا۔

زمین کے ساتھ کیا ہو گا؟

سب سے پہلے تو زمین سورج کو چھوڑ کر مشتری کے گرد گھومنا شروع کر دے گی۔ ہم کہہ سکتے ہیں کہ مشتری   زمین کا چاند نہیں ہوگا بلکہ زمین مشتری کا چاند بن جائے گی۔  ایک اور  ایفیکٹ یہ ہو گا کہ زمین پر مشتری کی گریویٹی کی بدولت آتش فشاں ابل پڑیں گے۔ یہ بالکل ایسے ہی ہو گا جیسے کہ مشتری کے سب سے قریبی چاند Io پر ہوتا ہے۔ Ioپر سولر سسٹم میں سب سے زیادہ آتش فشانی ہوتی ہے اور یہ مشتری کی گریویٹی کی بدولت ہے۔ اس کے علاوہ   زمین پر زندگی کے امکانات بہت کم ہو جائیں گے کیونکہ ہم مشتری کی ریڈی ایشن کے اندر موجود ہونگے۔  سمندروں میں بڑی بڑی لہریں اٹھیں گی۔

چاند کی زمین کے گرد گھومنے کی رفتار 1.02  کلو میٹر فی سیکنڈ ہے۔ زمین جب مشتری کا چاند بن جائے گی تو یہی رفتار زمین کو ملے گی۔ ایک دم سے رفتار تبدیل ہونے کی وجہ سے زمین پر نظام درہم برہم ہو جائے گا۔

مشتری کا سب سے قریبی چاند Io مشتری سے 422,000 کلومیٹر کی دوری  پر ہے جبکہ زمین سے چاند کا اوسطاً  فاصلہ 384,000 کلو میٹر ہے۔  دوسرے الفاظ میں ہم Io سے بھی زیادہ مشتری کے قریب ہونگے۔ Io  مشتری کے گرد 17  کلومیٹر فی سیکنڈ کی رفتار سے گھومتا  ہے ، اگر ہم اربٹل کیلکولیشن کریں تو ہمیں کم از کم 10کلو میٹر فی سیکنڈ کی رفتار چاہیے ہو گی مشتری کے گرد زمین کے محفوظ مدار کیلئے جبکہ زمین کی رفتار جیسا کہ اوپر بتایا گیا ہے 1.02 کلو میٹر ہو گی جس بنا پر زمین ایک دن کے اندر اندر ہی مشتری  پر گر جائے گی۔ بہرحال مرنے سے پہلے یہ ایک شاندار نظارہ ہو گا۔

مشتری کا کیا بنے گا؟

اس سوال کا جواب تھوڑا مشکل ہے۔ جب ہم نے چاند کی جگہ مشتری کو رکھا تھا اُس وقت چاند جس پوزیشن پر تھا اِسی سے مشتری کے مستقل کے بارے میں پیشن گوئی کی جا سکتی ہے۔ درج ذیل میں سے کوئی ایک مشتری کا مستقبل ہو گا

۱۔ مشتری  سیدھا سورج کی طرح سفر شروع کر دے گا مگر سورج کی سطح تک پہنچے سے پہلے ہی سورج کی طاقتور ہوائیں مشتری کو خلا میں بکھیر دیں گی۔

۲۔ مشتری سورج کے قریب سے کسی کامنٹ کی طرح گذر جائے گا۔ سلنگ شاٹ کی بدولت مشتری کا اربٹ بہت زیادہ بیضوی ہو جائے گا اور سورج مشتری کو سولرسسٹم کی آخری حدوں کی طرف پھینک دے گا جہاں سے مشتری کی واپسی کئی سالوں بعد ہو گی۔

۳۔ مشتری سورج سے مخالف سمت میں سفر شروع کر دے گا مگر سورج اس کو سولر سسٹم سے نہیں نکلنے دے گا، مشتری کا نیا اربٹ مریخ سے پڑے اور موجودہ اربٹ کے قریب بنے گا۔

۴۔ مشتری زمین کے اربٹ کے قریب ہی نئے اربٹ میں سورج کے گرد چکر لگانا شروع کر دے گامگر یہ سلسلہ زیادہ دیر تک قائم نہیں رہ پائے گا کیونکہ مشتری جتنے ماس کےسیارے کو اپنے ستارے کے اتنے قریب بنے رہنے کیلئے زیادہ تیزی سے سفر کرنا پڑتا ہے۔موجودہ رفتار پر مشتری آہستہ آہستہ سورج کے قریب جاتا جائے گا اور آخر کار ختم ہو جائے گا۔

(اس پوسٹ کا زیادہ تر متن کیورا کے ایک پیج سے لیا گیا ہے)



This post first appeared on Saleem's Blog - Official, please read the originial post: here

Share the post

چاند کی جگہ پر مشتری

×

Subscribe to Saleem's Blog - Official

Get updates delivered right to your inbox!

Thank you for your subscription

×