Get Even More Visitors To Your Blog, Upgrade To A Business Listing >>

Chehra mera tha nigahein us ki

چہرا میرا   تھا نگاہیں اس کی

چہرا  میرا  تھا  نگاہیں  اس  کی
خامشی میں بھی وہ باتیں اس کی
میرے چہرے پہ غزل لکھتی گئیں
شعر کہتی ہوئی آنکھیں اس کی
شوخ لمحوں کا پتہ دینے لگیں
تیز  ہوتی  ہوئی سانسیں  اس  کی
ایسے موسم بھی گزارے  ہم نے
صبحیں جب اپنی تھیں، شامیں اس کی
رنگ جوئندہ   وہ ،  آئے تو  سہی !
پھول تو پھول ہیں ، شاخیں اس کی
فیصلہ موجِ  ہوا  نے   لکھا !
آندھیاں میری، بہاریں  اُس کی
خود پہ بھی کھلتی نہ ہوں جس کی نظر
جانتا  کوں  زبانیں   اُس کی
نیند  اس سوچ  سے  ٹوٹی  اکثر
کس طرح کٹتی  ہیں راتیں اس کی
دور  رہ کر بھی  سدا  رہتی  ہیں
مجھ کو تھامے ہوئے بانہیں اس کی
             پروین شاکرؔ



This post first appeared on Urdu Poetry Collection, please read the originial post: here

Share the post

Chehra mera tha nigahein us ki

×

Subscribe to Urdu Poetry Collection

Get updates delivered right to your inbox!

Thank you for your subscription

×