Get Even More Visitors To Your Blog, Upgrade To A Business Listing >>

چین نے دفاعی بجٹ میں 7.5 فیصد اضافہ کر دیا

چین نے سال 2019 میں اپنی فوج پر کیے جانے والے اخراجات میں 7.5 فیصد کا اضافہ کر دیا ہے جس سے چین کے حریف اور پڑوسی ایشیائی ممالک میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔ حالیہ اضافے کے باوجود فوج پر گزشتہ برس اس سے زیادہ رقم خرچ کی گئی تھی اور اس سال نسبتاً کم رقم خرچ کیے جانے کی وجہ چین کی سست ہوتی معیشت اور عالمی چیلنجز ہیں۔ چین کی جانب سے کیے گئے اس اضافے کے بعد حاصل ہونے والی رقم 20 لاکھ پیپلز لبریشن آرمی کے لیے جدید اسلحے، جنگی جہازوں، اسلحہ بارود اور مشینری کی خریدو فروخت پر خرچ کی جائے گی۔ رواں سال کے آغاز میں نیشنل پیپلز کانگریس کے سالانہ اجلاس میں پیش کی گئی رپورٹ کے مطابق 2019 میں چینی حکومت اپنے دفاع پر ایک کھرب 77 ارب 60 کروڑ ڈالر خرچ کرے گی۔

چین کے پاس دنیا کی سب سے بڑی فوج ہے اور وہ امریکا کے بعد اپنی فوج پر سب سے زیادہ رقم خرچ کرتا ہے اور امریکا رواں سال میں اپنے دفاع پر 7 سو 16 ارب ڈالر خرچ کرے گا۔ خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کے مطابق چین کے وزیر اعظم لی کے کیانگ نے تقریباً 3 ہزار اراکین پارلیمنٹ سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ چین کی خود مختاری، سیکیورٹی اور ترقیاتی مفادات کے لیے حکومت فوجی ٹریننگ کو مضبوط اور جدید خطوط پر استوار کرے گی۔ چین کی جانب سے اپنے فوج کے بجٹ میں گزشتہ 3 سال کے دوران بتدریج کمی کی وجہ دراصل کم تر شرح نمو ہے جہاں اہداف کا حصول 6 سے 6.5 فیصد تک رہا۔

چین کے فوجی امور کے ماہر جیمز چار نے کہا کہ فوج پر حد سے زیادہ اخراجات کے مقابلے میں چین کی دیگر قومی ترجیحات بھی ہیں کیونکہ فوج پر حد سے زیادہ اخراجات سے حکومت دیگر اہم وسائل سے محروم ہو جائے گی اور یہی کچھ گزشتہ صدی کے آخر میں روس کی تباہی کی وجہ بنا تھا۔ چین کے تائیوان، ویتنام، فلپائن، برونائی، ملائیشیا کے ساتھ تنازعات ہیں جبکہ جاپان کے ساتھ بھی ان کے تاریخی سطح پر سرحدی مسائل ہیں اور چین کے بھاری بجٹ پر یہ ممالک ہمیشہ ہی تحفظات کا اظہار کرتے رہے ہیں۔ البتہ نیشنل پیپلز کانگریس کے ترجمان زینگ یسوئی کا کہنا تھا کہ چین کی جانب سے فوج پر بھاری اخراجات سے دیگر ممالک کو کسی بھی قسم کے خطرات لاحق نہیں اور اس کا مقصد اپنی خود مختاری اور سیکیورٹی کو یقینی بنانا ہے۔

تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ چین کو اپنے جنگی ساز و سامان پر اخراجات کے ساتھ ساتھ اپنی فوج کی تنخواہ اور ان کا معیار زندگی بہتر بنانے کے بارے میں بھی سوچنا چاہیے۔ چین اپنی فوج پر اخراجات میں دنیا میں دوسرے نمبر پر موجود ہے لیکن وہ اب بھی دیگر ممالک کی جانب سے اپنی فوج پر کیے جانے والے اخراجات میں کہیں آگے ہے اور اس نے 2018 میں دنیا کے مختلف ممالک کو کافی پیچھے چھوڑ دیا تھا۔ فوج پر اخراجات کی فہرست میں تیسرے نمبر پر سب سے بڑا ملک سعودی عرب ہے اور اس نے اپنی فوج پر 82 ارب 90 کروڑ ڈالر خرچ کیے جبکہ روس نے لگ بھگ 63 ارب ڈالر اور بھارت نے 57 ارب 90 کروڑ ارب ڈالر کی خطیر رقم خرچ کی۔

بشکریہ ڈان نیوز



This post first appeared on All About Pakistan, please read the originial post: here

Share the post

چین نے دفاعی بجٹ میں 7.5 فیصد اضافہ کر دیا

×

Subscribe to All About Pakistan

Get updates delivered right to your inbox!

Thank you for your subscription

×