Get Even More Visitors To Your Blog, Upgrade To A Business Listing >>

سعودی عرب میں تارکین وطن سے ماہانہ ٹیکس لینے کا فیصلہ

سعودی عرب میں ملازمتوں کے لئے مقیم تارکین وطن سے یکم جولائی سے 100 ریال ماہانہ ٹیکس لیا جائے گا جو آئندہ سال یکم جولائی سے 200 ریال اور جولائی 2020 تک 400 ریال ماہانہ کر دیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق سعودی حکومت کے اس اقدام کا مقصد سعودی شہریوں کے لئے ملازمتوں کے زیادہ مواقع پیدا کرنے اور غیر ملکیوں کی یہاں کام کرنے کی حوصلہ شکنی کرنے کے فیصلے کے تحت اٹھایا ہے۔ سعودی نئے ٹیکس قوانین کے تحت ایسے سعودی تجارتی ادارے جہاں مقامی افراد کے مقابلے غیر ملکی کارکنوں کی تعداد زیادہ ہو گی وہ حکومت کو فی تارک وطن کارکن 400 ریال ماہانہ ٹیکس دیں گی جو 2019 تک 600 ریال اور 2020 تک 800 ریال کر دیا جائے گا۔

اگر کمپنی میں مقامی کارکنوں کی تعداد تارکین وطن سے زیادہ ہے تو یہ ٹیکس 100 ریال فی غیر ملکی کارکن ہو گا۔ نئے قانون کے تحت تارک وطن کے بچے بھی ٹیکس نیٹ کی زد میں آئیں گے۔ ایسے تارک وطن کارکن جو اپنے خاندان سعودی عرب میں رکھتے ہیں کو 300 روپے ماہانہ ٹیکس دینا ہو گا تا ہم ان ٹیکسز کا اطلاق ڈرائیورز اور صفائی کا کام کرنے والوں نہیں ہو گا۔ ٹیکس کی زد میں ایسی کمپنیاں آئیں گی جہاں بڑی تعداد میں غیر ملکی کام کرتے ہیں۔
 



This post first appeared on All About Pakistan, please read the originial post: here

Share the post

سعودی عرب میں تارکین وطن سے ماہانہ ٹیکس لینے کا فیصلہ

×

Subscribe to All About Pakistan

Get updates delivered right to your inbox!

Thank you for your subscription

×